30th October 2020

 اقوام متحدہ کے اقتصادی اور سماجی کمشن اور کامسیٹس کے مابین تحقیق سمیت مختلف شعبوںمیں باہمی تعاون کا معاہدہ طے پاگیا

اقوام متحدہ کے اقتصادی اور سماجی کمشن اور کامسیٹس کے مابین تحقیق سمیت مختلف شعبوںمیں باہمی تعاون کا معاہدہ طے پاگیا

ایس کیپ کی انڈر سیکریٹری ڈاکٹر شمشاداختر، کامسیٹس کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر ایس ایم جنید زیدی نے ایم او یو پر دستخط کئے

حکومت نے ملک میں تحقیق کی کلچر کی حوصلہ افزائی کے لئے کلیدی اقدامات اٹھائے ہیں۔ وفاقی وزیر سائنس وٹیکنالوجی رانا تنویر حسین

اسلام آباد ( ) ایشیاءاور بحرالکاہل کے خطہ کے لئے اقوام متحدہ کے اقتصادی اور سماجی کمشن (ایس کیپ)اور ترقی پزیر ممالک میں پائیدار ترقی کی تنظیم کامسیٹس کے مابین باہمی اشتراک عمل اورتعاون کے معاہدے طے پاگیا ہے۔ جمعرات کو دونوں اداروں کے درمیان مفاہمت کی یاداشت پر دستخط ہوئے۔سائنس اینڈٹیکنالوجی کے وفاقی وزیر رانا تنویرحسین اس موقع پر مہمان خصوصی تھے جبکہ وفاقی سیکریٹری وزارت سائنس وٹیکنالوجی مسز یاسمین مسعود، اقوام متحدہ کے ریذیڈنٹ ریپریزنٹیٹیو، مختلف ممالک کے سفیروں دیگر حکام اس موقع پر موجود تھے۔ اقوام متحدہ کے اکنامک اینڈسوشل کمشن فار ایشیاءاینڈ پسیفک (ایس کیپ) کی انڈر سیکریٹری ڈاکٹر شمشاداختراور کامسیٹس کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر ایس ایم جنید زیدی نے اپنے اداروں کی جانب سے ایم او یو پر دستخط کئے۔معاہدہ کے تحت ایس کیپب اور کامسیٹس تحقیق،مطبوعات کی مشترکہ بنیادوں پر اشاعت، مختلف تقاریب کا مشترکہ بنیادوں پر انعقاد، استعداد کار میں اضافہ کے لئے ورکشاپس کا اہتمام کرنے میں تعاون کریں گے۔ مراکز فضیلت(سینٹر آف ایکسیلنس) کا جال بچھانے، مطبوعات کی اشاعت،مختلف شعبوں میں باہمی دلچسپی پر مبنی دستاویز ات اور معلومات کے علاوہ ماہرین کے تبادلہ جیسی کامسیٹس کی سرگرمیوں کے حوالے سے ایس کیپ اقدامات اٹھائے گا۔ کامسیٹس کی رکنیت سازی مہم میں بھی ایس کیپ تعاون اور مدد فراہم کرے گا۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر شمشاد اختر نے ملک میں تحقیق اور تخلیقی کلچر پروان چڑھانے میں وزارت سائنس وٹیکنالوجی کے کردار کو سراہتے ہوئے کہاکہ ڈاکٹر ایس ایم جنید زیدی کی قیادت میں کامسیٹس ساﺅتھ کے ممالک میں ترقیاتی تعاون کے فروغ میں شاندار خدمات انجام دے رہا ہے۔ انہوں نے ایس کیپ اور کامسیٹس کو بھرپور تعاون اور حمایت کا یقین دیا۔ وفاقی وزیر سائنس وٹیکنالوجی راناتنویر حسین نے کامسیٹس اور ایس کیپ کے مابین ایم او یوپر دستخطوں کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہاکہ ترقی پزیر ممالک میں سائنس ٹیکنالوجی کا فروغ غربت کے خاتمے اور پائیدار ترقی کے اہداف کے حصول میں کلیدی کردار ادا کرسکتا ہے۔ اس مقصد کے لئے کامسیٹس کی کاوشیں لائق تحسین ہیں۔ انہوں نے کہ کامسیٹس اور ایس کیپ کے درمیان تعاون کے نتیجے میں نہ صرف پاکستان بلکہ کامسیٹس سے وابستہ تمام ترقی پزیر استفادہ کرسکیں گے۔ وفاقی وزیر نے کہاکہ موجودہ حکومت ملک میں سائنس وٹیکنالوجی کے فروغ پر پختہ یقین رکھتے ہوئے اس شعبہ کو اولین ترجیح دیتی ہے۔ حکومت نے ملک میں تحقیق کی کلچر کی حوصلہ افزائی کے لئے کلیدی اقدامات اٹھائے ہیں تاکہ ملک میں تخلیقی انداز اپنانے کا چلن عام ہو۔ کامسیٹس بین الحکومتی تنظیم ہے جس میں ترقی پزیر رکن ممالک کی تعداد 26ہوچکی ہے۔ اس تنظیم کے تحت دنیا بھر میں 21مراکز فضیلت قائم ہیں۔ یہ ادارہ ساﺅتھ ساﺅتھ کے عنوان سے ترقی پزیر ممالک میں سائنس اور ٹیکنالوجی کے فروغ کے ذریعے پائیدار ترقی کے اہداف کے حصول کے لئے معرض وجود میں لایاگیا تھا۔ ایس کیپ ملٹی لیٹرل پلیٹ فارم کے طورپر رکن ریاستوں میں پائیدار اقتصادی اور سماجی ترقی کے لئے ایشیاءاور بحرالکاہل کے خطوں میں تعاون کو فروغ دینے کے لئے کام کررہا ہے۔

٭٭٭٭

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *