23rd October 2020

تمہارا کتا کتا اور میرا کتا ٹّومی

تمہارا کتا کتا اور میرا کتا ٹّومی ۔۔۔سوشل میڈیا پر پی ٹی آئی کے لکھاریوں کا مقابلہ کوئی نہیں کر سکتا ۔ ان کی تحریروں میں اتنا دم ہوتا ہے کہ وہ اپنی تحریر کی بنیاد پر ہی رائے عامہ پر اثر انداز ہوتے ہیں ۔ سیاستدانوں سے لیکر مذہبی راہنماﺅں تک اور صحافیوں سے لیکر بلاگروں تک کوئی ان کے قلم کی کاٹ سے بچ نہیں سکتا ۔ 

کے پی کے میں مشعل خان نامی ایک نوجوان کویونیورسٹی میں بڑی بے دردی سے قتل کیاگیا ۔میں اس انتظار میں تھا کہ یہ لکھاری کب آسمان سر پر اٹھاتے ہیں لیکن ان کے پیجز پر پن ڈراپ خاموشی تھی ۔ میں سمجھا شاید توہین مذہب کا متنازعہ معاملہ ہے اس لیے انتظار کررہے ہوں گے۔ بعد میں جے آئی ٹی کی رپورٹ آئی پتہ چلا کہ مشعل خان بے گناہ قتل ہوا تھا ۔ ان پیجز پر خاموشی رہی ۔خبر آئی کہ اس کی بہنوں نے تعلیم چھوڑ دیاور وہ گھر پر بیٹھ گئی ہیں ۔ کیونکہ انہیں دھمکیاں مل رہی ہیں ۔ ان پیجز پر خاموشی رہی ۔اس کے گواہوں پرخاموش رہنے کا دبا ﺅ ڈالا گیا ۔ ان پیجز پر خاموشی رہی ۔ ہجوم کو قتل پر اکسانے والے پی ٹی آئی کے کونسلر کو ملک سے فرار کروا دیا گیا ان پیجز پر موت کی سی خاموشی چھائی رہی ۔ 

پچھلے ہفتے ڈیرہ اسمائیل خان میں ایک ماں کی بیٹی کو ننگا سڑکوں پر گھسیٹا گیا ۔ تو میں سمجھا خبر جھوٹی ہوگی ایسے کیسے ممکن ہے کہ پی ٹی آئی کے انقلابی لکھاری اس پر کچھ نہ لکھیں ۔ چھ سات دن بعد پتہ چلا ہے کہ وہ خبر سچی تھی۔ ان پیجز پر خاموشی رہی ۔پولیس واقعی اس مقدمے کو درج نہیں کر رہی تھی۔ ان پیجز پر خاموشی رہی ۔آپ ابھی بھی آپ کسی بھی پی ٹی آئی کے کارکن کے سوشل میڈیا پیج پر جا کر دیکھ لیں وہ عمران خان کے بارہ موسموں والے سلپ آف ٹنگ کا دفاع کرتا نظر آئے گا لیکن اس واقعہ پر کوئی دو لفظ آ پ کو نہیں ملیں گے ۔

بکمپیوٹر خود محمود اصغر چوہدری

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *