29th October 2020

جِن سے مِل کر زندگی سے پیار ھو جائے وہ لوگ ۔۔آپ نے شاید نہ دیکھے ھوں ،

جِن سے مِل کر زندگی سے پیار ھو جائے وہ لوگ ۔۔

آپ نے شاید نہ دیکھے ھوں ، مگر ایسے بھی ھیں 

گوجرانوالہ میں ، مولانا حبیب الرحمٰن مرحوم کے بیٹے اور ھمارے انتہائی شفیق دوست جناب طاھر مطیع الرحمٰن سے ملاقات کی اور ان کے والد کی وفات پر تعزیت کی ۔ مولانا حبیب الرحمٰن کا آبائی تعلق گو جرانوالہ سے تھا لیکن وہ ایک طویل عرصے سے مانچسٹر میں مقیم تھے ۔ زمانہ طالب علمی میں قیامِ پاکستان کی تحریک میں عملی طور پر حصہ لیا ۔ سید مودودی رحمتہ اللہ علیہ کے دور سے جماعت اسلامی سے متعارف ھوئے اور زندگی کی آخری سانس تک تحریک اسلامی سے وابستہ رھے ۔ بنیادی طور پر ایک استاد تھے اور برطانیہ کے مختلف سرکاری سکولوں میں پڑھاتے رھے ۔ مانچسٹر کی سب سےبڑی اور اولین مسجد ” وکٹوریہ پارک مسجد ” کے امام اور خطیب رھے ۔ یُو کے اسلامک مشن کے صدر رھے۔ انگریزی زبان پر مکمل عبور تھا اس لحاظ سے مسلم و غیر مسلم افراد کے اندر ، برطانیہ بھر میں دعوتِ دین کا کام کرتے رھے ۔بلا مبالغہ ، ھزاروں لوگ ان سے متاثر ھوئے اور ان کے شاگردوں میں شامل رھے۔مولانا حبیب الرحمٰن صاحب گوجرانوالہ میں البدر ایجوکیشن سوسائٹی کے بھی ٹرسٹی تھے ۔ اس سوسائٹی کے دو پرائمری اور دو ھائی سکول ھیں جہاں دو ھزار سے زائد طلبہ و طالبات تعلیم حاصل کر رھے ھیں ۔یہاں مستحق طلباء کو مفت تعلیم دی جاتی ھے ۔مولانا حبیب نے ایک بھرپور زندگی گزاری ۔مانچسٹر کے سیاسی ، سماجی اور مذھبی حلقوں میں انہیں ایک باوقار اور نمایاں مقام حاصل تھا ۔

مجھے بھی اُن سے بہت کچھ سیکھنے اور اُن کے ساتھ کام کرنے کا موقع ملا ۔ھم سب بھائیوں کے ساتھ ان کا قریبی تعلق تھا ۔ الحمدُ لِلّہ

خُدا رحمت کنند ایں عاشقانِ پاک طینت را

( نصر اقبال چوھدری اسلام آباد / مانچسٹر )

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *