15th April 2021

K2 TV MANCHESTER

WE ARE WITH YOU EVERYDAY EVERYWHERE

صحافت کے میدان میں اوورسیز پاکستانیوں کا کردار شکیل قمر مانچسٹر

1 min read

(یہ مضمون اوورسیز پاکستانی فاونڈیشن کی صحافیوں کے اعزاز میں منعقدہ تقریب میں پڑھا گیا )

برطانیہ میں رہنے والے اوورسیز پاکستانی زندگی کے دوسرے شعبوں کی طرح صحافت کے میدان میں بھی کسی سے پیچھے نہیں ہیں ، نصف صدی پہلے کی بات ہے کہ یہاں اُردو صحافت کم کم دیکھنے کو ملتی تھی، شروع میں اگر کچھ لوگ اس میدان کے دھنی یہاں آکر آبا د ہوئے بھی تو اُنہوں نے لوکل انگلش صحافتی اداروں میں شمولیت اختیار کرنے کو ہی بہتر سمجھا ، مگر اُس کے بعد آہستہ آہستہ کچھ ایسے بھی لوگ یہاں آ کر آباد ہوئے جنہوں نے اُرد و صحافت کی طرف دھیان دیا ، شروع میں چونکہ اُردو زبان جاننے والے لوگ اتنے زیاد ہ نہ تھے اس لئے لندن اور بریڈ فور ڈ سے ہی ایک دو اخبار یا رسالے دیکھنے کو ملتے ہیں، پھر یہ سفر آگے کی طرف بڑھتا ر ہا اور جوں جوں اوورسیز پاکستانیوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا گیا ویسے ہی اُردو صحافت کی ضرورت او ر اہمیت کا بھی اندازہ ہونے لگا او ر اس طرح آہستہ آہستہ لوگ صحافت کے میدان کی طرف راغب ہو نا شروع ہو گئے ، چراغ سے چراغ جلتا رہا اور جوں جوں ا وورسیزپاکستانیوں کی تعداد میں اضافہ ہوتا گیا ویسے ہی یہاں اُردو صحافت کی طرف بھی لوگوں کا دھیان بڑھنے لگا او ر آج جب کے دنیا میں پرنٹ میڈیا پر الیکٹرانک میڈیا سبقت لے جاتا ہوا دکھائی دے رہا ہے تو یہاں یوکے میں اُردو صحافت پرنٹ میڈیا کے ساتھ ساتھ الیکٹرانک میڈیا میں بھی اپنے پاؤں جماتی ہوئی دکھائی دیتی ہے آج کے دور کی اگر بات کریں تو پرنٹ میڈیا میں ا خبارات رسائل اور دیگر صحافتی جرائد کی کوئی کمی دکھائی نہیں دیتی ، اسی طرح الیکٹرانک میڈیاکی ترقی کے ساتھ ساتھ اُردو صحافت بھی کسی سے کم نہیں ، جہاں انگنت اُردو ٹی وی چینل مقامی سطح پر اپنی نشریات کا آغاز کر چکے ہیں وہاں پرنٹ میڈیا کے ساتھ ساتھ الیکٹرانک میڈیا سے تعلق رکھنے والے صحافیوں کی تعداد میں بھی روز بروز اضافہ ہوتا دکھائی دیتا ہے ، جس طرح اُردو کے اخبارات اور جرائد کی تعداد میں اضافہ ہوا ہے اسی طرح اُردو ٹی وی چینل او ر دوسرے چینلوں پر اُردو پروگراموں کی بھی کوئی کمی دکھائی نہیں دیتی ، ظاہر ہے کہ اتنے زیادہ اداروں کو چلانے کے لئے اُردو صحافت کے متعلقین میں بھی اضافہ ہو چکا ہے اور ہر کوئی اپنے ادارے کی کارگذاری بڑھانے اور خاص طور پر خبروں کی دوڑ میں سبقت لے جانے میں مگن ہے ، یوکے کے بڑے شہروں میں سینکڑوں لوگ اس شعبے سے وابسطہ ہو چکے ہیں اور اُردو صحافت ترقی کی منازل طے کرتی چلی جارہی ہے ،آج یوکے میں جہاں اُردو اخبارات رسائل اور دیگر جرائد کی کوئی کمی نہیں ہے وہاں الیکٹرانک میڈیا پر بھی اُردو صحافت بھر پور انداز میں جلوہ افروز ہے اور سب سے بڑھکر یہ کہ اُردو میڈیم کے صحافیوں کی بھی کمی دکھائی نہیں دیتی ، دیکھنے میں آیا ہے کہ اُردو صحافت سے تعلق رکھنے والے صحافی انگلش میڈیم کے صحافیوں سے کافی پیچھے ہیں ایک سروے کی رپورٹ سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ اُردو میڈیم کے صحافیوں کو جدید صحافتی اور ٹیکنیکی اسرار و رموز سے واقفیت حاصل کرنا بہت ضروری ہے ،آج بھی اگر دیکھا جائے تو اُردو صحافت مقامی انگلش صحافت سے بہت پیچھے کھڑی ہے اُس کی وجہ یہی دکھائی دیتی ہے کہ اُردو صحافت سے تعلق رکھنے والے صحافی تعلیم ،تجربے اور ٹیکنیکی مہارت میں ابھی تک اُن بلندیوں تک نہیں پہنچ سکے جہاں انگلش صحافت سے تعلق رکھنے والے صحافی پہنچے ہوئے ہیں ، ضرورت اس اَمر کی ہے کہ اُردو صحافت سے تعلق رکھنے والے صحافی خواہ پاکستان میں ہوں یا دنیا کے کسی اور ملک میں اُنہیں صحافتی اقدارصحافت میں اخلاقیات کی ضرورت،معاندانہ رویے اور زبان و بیان پر دسترس کے ساتھ ساتھ جدید ٹیکنیک، آئی ٹی اور الیکٹرانکس جیسی ایجادات سے پوری پوری جان کاری حاصل کرنے کی ضرورت ہے ، اس سلسلے میں میری رائے میں پاکستان اور پاکستان سے باہریقیناًً یو کے میں اوورسیز پاکستانیوں کو یہ ذمہ داری سون کہ وہ صحافت کے جدید اسرارو رموز سے جان کاری حاصل کرنے کے لئے دو صحافتی اکیڈمیاں قائم کریں ایک پاکستان میں او ر دوسری یوکے میں ، اس سے نہ صرف اُردو صحافت کو زبردست فائدہ پہنچ سکتا ہے بلکہ اُوورسیز پاکستانیوں کے ساتھ ساتھ پاکستان سے بیرونِ ملک آنے والے نئے صحافیوں کی بھی اچھی تربیت ہو سکتی ہے ، مندرجہ بالا حقائق کی روشنی میں اوورسیز پاکستانی فاؤنڈیشن سے گذارش کروں گا کہ اُردو صحافت اور خاص طور پر صحافیوں کے وسیع تر مفاد کی خاطر صحافت ، صحافتی اُمور، جدید الیکٹرانک میڈیا کی ٹیکنیک اور اس سے متعلقہ دیگر اُمور کی تربیت حاصل کرنے کے لئے پاکستان میں اور برطانیہ میں ایک، ایک صحافتی اکیڈیمی قائم کی جائے جس سے اوورسیز پاکستانی صحافیوں کے ساتھ ساتھ دیگر صحافی خواتین و حضرات بھی مستفید ہو سکیں۔

E MAIL <<<< kamarshakeel@aol.co.uk

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Copyright © All rights reserved. | Newsphere by AF themes.