قائد اعظم یونیورسٹی کی زمین کا تنازعہ۔ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کا قبضہ چھڑوانے کا مطالبہ وزیر اعظم پاکستان اور دیگر متعلقہ ادارے کردار ادا کریں۔ جوائنٹ ایکشن کمیشن

قائد اعظم یونیورسٹی کی زمین کا تنازعہ۔ جوائنٹ ایکشن کمیٹی کا قبضہ چھڑوانے کا مطالبہ

وزیر اعظم پاکستان اور دیگر متعلقہ ادارے کردار ادا کریں۔ جوائنٹ ایکشن کمیشن

اسلام آباد ( ) قائد اعظم یونیورسٹی کی زمین پر قبضہ مافیا کی ناجائز تجاوزات اور قبضہ کے خلاف بننے والی جوائنٹ ایکشن کمیٹی کے ذمہ داران کا اہم اجلاس اسلام آباد کلب میں منعقد ہوا جس میں قائد اعظم یونیورسٹی ایلومنائی ایسوسی ایشن ، اکیڈمک سٹاف ایسو سی ایشن ،ملازمین و دیگر اسٹاف کے نمائندگان نے شرکت کی ۔ میٹنگ میں اس اھم مسئلہ پر وفاقی حکومت کی توجہ مبذول کرواتے ھوئے کہا گیا کہ چند نامور قبضہ گروپوں کا پاکستان کی سب سے بڑی جامعہ کی زمین پر گزشتہ کئی سالوں سے قبضہ چلا آرھا ہے ۔اجلاس میں کہا گیاکہ

72 -1967 میں کیپیٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی کی جانب سے 1709 ایکڑ ، 4کنال اور 12مرلہ جگہ نقشہ کے مطابق یونیورسٹی کے لئے مختص کی گئی ۔ سی ڈی اے کی جانب سے سپریم کورٹ میں پیش کی جانے والی رپورٹ اور قائد اعظم یو نیورسٹی میں 15جنوری2010 کو منعقد ہونے والے گزشتہ اجلاس کی کاروائی کے مطابق بھی 1709 ایکڑ زمین جامعہ قائد اعظم کی ملکیت ہے ۔ 29/9/2017 کو سروے آف پاکستان نے بھی اس بات کی کی تصدیق کی ہے کہ کل رقبے میں سے قائد اعظم یونیورسٹی کی باؤنڈری لائن میں صرف 1557.12ایکڑ زمین ہے جبکہ مختص شدہ زمین 1709 ایکڑ ہے ۔اسی طرح 1557.12میں 298ایکڑ کا وہ حصہ بھی شامل ہے جہاں پر غیر قانونی تجاوزات ہیں۔اجلاس میں مقبوضہ زمین کو جلد از جلد واگزار کروانے کا مطالبہ کیا گیا اور متعلقہ اداروں کی جانب سے ملک بھر میں ناجائز تجاوزات کے خلاف جاری کئے گئے ایکشن پر حکومت کو خراج تحسین پیش کیا گیا۔جوائنٹ ایکشن کمیٹی نے وزیر اعظم پاکستان عمران خان سے مطالبہ کیا ھے کہ وہ ذاتی دلچسپی لے کر اس مسئلہ کو حل کروانے میں اپنا کردار ادا کریں #

2467total visits,1visits today

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *