23rd October 2020

نواز شریف اور مریم بی بی نے عطاء الحق قاسمی کے ساتھ اچھا نہیں کیا ! شکیل قمر مانچسٹر

سال کا آخری دن ہے اور کل سے نیا سال شروع ہو جائے گا دوسرے بہت سے لوگوں کی طرح مجھے بھی بہتکچھ سوچنا ہے ،یہی کچھ کہ

گذشتہ سال کیسا رہا اور آنے والے سال میں کیا کیا کرنا ہے ،میرے خیال میں ہر شخص ہی آج کے دن یہ باتیں سوچ رہا ہو گا ،بحیثیت

ایک کالم نگار میں بھی یہی سوچ رہا ہوں کہ کون کون اپنے بارے میں کیا سوچ رہا ہوگا ،بعض اوقات ہم لوگ ہر لمحہ اپنے گذرے ہوئے لمحات کے بارے میں سوچتے ہیں اور کبھی کبھی ایسا بھی ہوتا ہے کہ جس ڈگر پر ہم چل رہے ہوتے ہیں اُسی پر چلتے رہتے ہیں اور ساری زندگی پیچھے

مُڑ کر نہیں دیکھتے خاص طور پر یہ خیال آج میرے ذہن میں اس لئے آیا کہ میرے لکھاری بھائی اپنی زندگی میں کوئی نہ کوئی نظریہ ضرور بنا لیتے

ہیں اور پھر ساری زندگی اُسی نظریے کے حق میں لکھتے چلے جاتے ہیں، ایک تو وہ لوگ ہیں جو ہر لمحہ اپنے نظریے کا احتساب کرتے ہیں اور

ایک ایسے بھی ہیں جو ساری زندگی اپنا یا اپنے نظریے کا احتساب نہیں کرتے ایسے ہی لوگوں میں آج میرے ذہن میں پاکستان کے نامور کالم نگار عطاء الحق قاسمی کا نام بھی آرہا ہے جنہوں نے ہمیشہ نواز شریف اور ’’ ن ‘‘ لیگ کے حق میں لکھا ،چونکہ میں اُن کا کالم باقاعدگی سے پڑھتا

ہوں اس لئے مجھے علم ہے کہ اُنہوں نے ہمیشہ ہی نواز شریف اور ’’ن ‘‘ لیگ کے حق میں لکھا بہر حال اُن کا یہ نظریہ تھا کہ نواز شریف اور ’’ ن ‘‘

لیگ ہی صحیح اور درست ہے باقی سب غلط ہیں شائد اس لئے بھی اُن کو ایسے ہی لکھنا چاہیے تھا کہ اُنہوں نے نواز شریف اور ’’ن ‘‘لیگ سے

بہت سے فائدے حاصل کئے تھے ،لیکن یہ مجھے نہیں معلوم کہ اُنہوں نے جتنابھی نواز شریف اور ’’ن‘‘ لیگ کے حق میں لکھا اُتنے فائدے بھی اُن سے حاصل کئے یا لکھا زیادہ اور فائدے کم حاصل کئے ،بہر حال اس کا فیصلہ تو وہ خود کر سکتے ہیں مگر مجھے یہ خیال ضرور آ رہا ہے کہ ایک نامور قلم کار کی حیثیت سے جناب عطاء الحق قاسمی نے نواز شریف اور ’’ن ‘‘ کے حق میں جتنا بھی جائز اور ناجائز لکھا اُس کے مقابلےمیں

اُنہوں نے نواز شریف اور ’’ن‘‘ سے جتنے بھی فائدحاصل کئے ہوں وہ یقیناً اِتنے نہیں ہوں گے جتنا کہ قاسمی صاحب نے نواز شریف اور ’’ن ‘‘ کو فائدہ پہنچایا ،کیونکہ قاسمی صاحب جیسے نامور قلم کار کا قلم کسی بھی سیاست دان اور سیاسی جماعت کو کتنا فائدہ پہنچا سکتا ہے اس کا اندازہ قاسمی صاحب کا ہر قاری با آسانی لگا سکتا ہے مگر قاسمی صاحب جیسے درویش آدمی کو نواز شریف اور ’’ن ‘‘ نے جو فائدہ پہنچایا وہ میری نظر میں بہت کم ہے بلکہ آپ اس مثال سے ہی اندازہ لگا سکتے ہیں کہ نواز شریف اور ’’ن ‘‘ نے قاسمی صاحب کو دو مرتبہ سفیر اور ایک مرتبہ پی ٹی وی

کا چئیر مین بنایا مگر قاسمی صاحب کے قلم نے نواز شریف کو تین مرتبہ وزیر اعظم بننے میں پوری پوری مدد کی ،آپ خود ہی اندازہ لگا سکتے ہیں کہ

کس نے کس سے زیادہ فائدہ حاصل کیا اور کون گھاٹے میں رہا ،کیونکہ زندگی کے اس حصے میں آکے قاسمی صاحب کو نواز شریف یا مریم بی بی

سے جو ہزیمت اُٹھا نا پڑی ہے اس کا کوئی بھی تدارک نہیں ہو سکتا کیونکہ نواز شریف اور مریم بی بی نے قاسمی صاحب کی شخصیت کو جتنا نقصان پہنچایا ہے اگر قاسمی صاحب چاہیں بھی تو نواز شریف اور مریم بی بی کو اُتنا نقصان نہیں پہنچا سکتے لہذا آج اگر قاسمی صاحب یہ سوچ رہے ہیں کہ اُنہوں نے ساری زندگی میں کیا کمایا اور کیا گنوایا تو میں صرف اِتنا ہی کہوں گا کہ قاسمی صاحب نے اپنے قلم کی حرمت کو بیچ کر جو بھی حاصل کیا

وہ کچھ بھی نہیں تھا ماسوائے اس کے کہ

ع ۔ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔عزتِ سادات بھی گئی

E Mail<<<<<< kamarshakeel@aol.co.uk

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *