28th October 2020

نیشنل یوتھ اسمبلی آف پاکستان کے زیر اھتمام پہلے ‘’ علامتی یوتھ پارلیمانی اجلاس ‘’ کا انعقاد جنوبی پنجاب تعلیم ،صحت ،روزگار ، صنعتی ترقی ، معیشت اور انفراسٹرکچر ڈویلپمینٹ کے حوالہ سے پسماندگی اور زبوں حالی کا شکار ھے

نیشنل یوتھ اسمبلی آف پاکستان کے زیر اھتمام پہلے ‘’ علامتی یوتھ پارلیمانی اجلاس ‘’ کا انعقاد

جنوبی پنجاب تعلیم ،صحت ،روزگار ، صنعتی ترقی ، معیشت اور انفراسٹرکچر ڈویلپمینٹ کے حوالہ سے پسماندگی اور زبوں حالی کا شکار ھے واحد حل انتظامی بنیادوں پر علیحدہ صوبہ کا قیام ھے ۔ زاھد اقبال چوھدری چیرمین قائمہ کمیٹی برائے لوکل گورنمنٹ ایف پی سی سی آئی

نیشنل یوتھ اسمبلی نوجوانوں کو مستقبل کا بہترین قائد بنانے کے لئے کردار سازی کے ساتھ ساتھ مسائل کو اجاگر کرکے حل کروانے کی عملی کاوش بھی کر رھی ھے ۔ حنان علی عباسی صدر نیشنل یوتھ اسمبلی

جنوبی پنجاب کی عوام صوبائی بجٹ ودیگر وسائل کی غیر منصفانہ تقسیم اور جغرافیائی طور پر صوبائی دارالحکومت سے دوری کی وجہ سے ھر شعبہ ھائے زندگی میں پسماندگی اور محرومی کا شکار ھیں ۔نئی مردم شماری کے مطابق ملکی آبادی کا باسٹھ فیصد پنجاب جبکہ اڑتیس فیصد باقی پورا پاکستان ھے پارلیمنٹ میں صوبہ پنجاب کی عددی اکثریت کی وجہ سے چھوٹے صوبوں میں احساس محرومی پایا جاتا ھے نظریہ پاکستان کی اساس کے مطابق انتظامی بنیادوں پر جنوبی پنجاب کو علیحدہ صوبہ بنانے سی فیڈریشن مزیدمضبوط اور مستحکم ھو گی اور پارلیمنٹ میں آبادی کے تناسب سے صوبوں کی نمائندگی میں توازن کے ساتھ ساتھ تعمیر و ترقی سے محروم علاقوں میں بھی خوشحالی کے نئے سفر کا آغاز ھوگا ان خیالات کااظہار زاھد اقبال چوھدری نے این ایف سی انسٹی ٹیوٹ آف انجنیئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی میں جنوبی پنجاب بھر سے آئے ھوئے ممبران نیشنل یوتھ اسمبلی کے اراکین سے خطاب کرتے ھوئے کیا ۔اس موقع پر وائس چانسلر ڈاکٹر اختر کالرو ،ڈائریکٹر سٹوڈنٹس افئیرز ڈاکٹر طاھر قریشی ، محمد نواز جوئیہ ،یونیورسٹی ٹیم لیڈر عبدالرحمن ، عثمان ظہور بھٹہ ، عبدالوہاب بلوچ ،حسیب خاں بدھ ، صدام سورو ، شبروز بلوچ سمیت سینکڑوں اراکین نیشنل یوتھ اسمبلی و میڈیا نمائندگان موجود تھے۔زاھد اقبال چوھدری نے مزید کہا کہ جنوبی پنجاب صوبہ بننے سے نیشنل فنانس کمیشن ایوارڈ و دیگر ذرائع اور محصولات سے حاصل ھونے والے آمدنی سے تعلیم ، صحت ، روزگار ، معاشی و صنعتی ترقی ، انفراسٹرکچر ڈویلپمینٹ سے وسیب کی محرومیوں کا ازالہ ھوگا اور ملکی معیشت مضبوط ھو گی جبکہ آب پاشی کے لئے بطور صوبہ حصہ میں ملنے والے نہری پانی سے بنجر وغیر آباد زمینیں آباد ھوں گی اور زراعت کے شعبے میں ترقی اور کسان خوشحال ھوں گے ۔

۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے حنان عباسی صدر نیشنل یوتھ اسمبلی نے کہاکہ اس وقت ملک کی 60ضلعی حکومتیں اور30بڑی یونیورسٹیز قومی یوتھ اسمبلی کی باضابطہ معاون بن چکی ہیں اورہمارابڑامقصد نوجوانوں کی پارلیمانی تربیت اوران میں تحقیقی شعور کی جستجوپیداکرنااوراس کے لئے ایک پلیٹ فارم مہیاکرناہے ۔انہوںنے کہاکہ لیڈروہ ہوتاہے جو ویژن دیتاہے آگے بڑھنے اورترقی کرنے کاسفرآسان بناتااوراس کے لئے ایک گائیڈلائن دیتاہے ۔ہماری خواہش اورکوشش ہے کہ آپ لوگوں میں سے ہی ایسے قابل لوگ سامنے آئیں جونہ صرف اس خطہ کے مسائل حل کرنے کے قابل ہوں بلکہ ملکی اداروں کوبھی قابل فخربناسکیں ،میری نصیحت ہے کہ آپ یہاں سے بہترین انجینئربن کرنکلیں تواس کے ساتھ ساتھ بہترین انسان بھی ہوں کیونکہ دنیاوی زندگی کے بعد ایک اورزندگی بھی ہے جہاں ہم سب نے اپنی اپنی ذمہ داریوں کا حساب دیناہے ۔ انہوں نے کہا کہ یوتھ اسمبلی کے اجلاس مسائل کو اجاگر کرنے کے ساتھ ساتھ انکے حل کے لئے بھی معاون ثابت ھوتے ھیں ۔

اس موقع پرخطاب کرتے ہوئے ڈائریکٹر سٹوڈنٹس آفیرز ڈاکٹرطاہر قریشی اورڈاکٹرصادق ہیڈآف کیمیکل انجینئرنگ نے کہاکہ ہماری بدقسمتی ہے کہ ہمارے بہت سے لیڈروں میں خواہ وہ سیاسی ہوں یااداروں کے سربراہ ہوں مثبت اورعصرحاضر کے تقاضوں کے مطابق درکار ویژن سے محروم ہیں ۔ہمیں آگے بڑھنے اورکامیابی کے لئے مشن کے تحت کام کرناہوگا۔آپ میں سے بہت سے لوگوں کو مستقبل میں لیڈربننے کے مواقع ملیں گے تب آپ نے قوم اورملک کےلئے ایک مشن کے تحت کام کرناہے یہی ہمارافرض اوریہی ہماری کامیابی ہے۔اس موقع پرموجودنوجوانوں کی بڑی تعدادنے قردادیں پاس کیں کہ جنوبی پنجاب میں تعلیمی اورطبی شعبہ میں ایمرجنسی نافذ کرکے تحصیل اورڈویژن کی سطح پرٹیچنگ ہسپتال فنی تعلیم کے ادارے اوریونیورسٹیاں قائم کی جائیں ۔پنجاب ٹیکسٹ بک کاتدریسی نصاب جدیدتقاضوں کے مطابق تبدیل کیاجائے ،نشترہسپتال فیز ٹوپرفوری کام شروع کیاجائے پورے جنوبی پنجاب میں سیوریج کے ناکارہ سسٹم کو تبدیل کرنے کےلئے فوری کام شروع کیاجائے ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *