پاکستان میں اوورسیز پاکستانیوں کے غیر فعال ادارے ! (شکیل قمر مانچسٹر )


پاکستان میں اوورسیز پاکستانیوں کے غیر فعال ادارے !

(شکیل قمر مانچسٹر )

اوورسیز پاکستانیوں کے معاملات کے بارے میں خبروں میں ایک بہت بڑی غلط فہمی پیدا ہو رہی ہے جس کی درستگی کرنا بہت ضروری ہے عام آدمی سمجھ رہا ہے کہ نئی حکومت نے برسراقتدار آتے ہی اوورسیز پاکستانیوں سے متعلق پاکستان میں قائم ادارے جن میں اوورسیز پاکستانی فاؤنڈیشن اور اوورسیز پنجاب کمیشن شامل ہیں،اِنہیں برخاست کردیا ہے ،حالنکہ ایسا نہیں ہے ،سب سے پہلی بات تو یہ ہے کہ اوورسیز پاکستانی فاؤنڈیشن جس کے بورڈ آف گورنر کے چئیر مین بیرسٹر امجد ملک تھے اور وہ گذشتہ چند سالوں سے انتہائی محنت سے کام کر رہے تھے ،اُن کے بارے میں بِلا خوفِ تردید یہ کہا جاسکتا ہے کہ اُن کے دور میں اوورسیز پاکستانیوں کے لئے سب سے زیادہ کام ہوا ہے

،ابھی اُن کی تعیناتی کا عرصہ ختم نہیں ہوا تھا کہ الیکشن سے قبل شاہد خاقان عباسی کے دور میں افسر شاہی نے اپنی ریشہ دوانی سے چئیرمین بیرسٹر امجد ملک کو سبکدوش کرواکے فاؤنڈیشن کے تمام معاملات مرکزی سیکریٹری وزارتِ اوورسیز نے اپنی تحویل میں لے لئے ،اس طرح اوورسیز پاکستانی فاؤنڈیشن کے بورڈ آف گورنر کے چئیرمین امجد ملک کو وقت سے پہلے ہی سبکدوش کردیا گیا اور فاؤنڈیشن غیر فعال ہو گئی دوسرا معاملہ پنجاب اوورسیز کمیشن کو ختم کرنے کا ہے ،دراصل نئی حکومت کے برسرِاقتدار آنے سے پہلے ہی سپریم کورٹ نے پنجاب اوورسیزکمیشن کے چئیرمین افضال بھٹی کے خلاف ایک درخواست کی سماعت کرتے ہوئے اُن کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کے احکامات صادر کیئے تھے،اور یاد رہے کہ نواز شریف کی حکومت نے پنجاب اوورسیز کمیشن کے ڈپٹی چئیرمین خالد بٹ کو پہلے ہی سینیٹر بنوادیا تھا ،اس طرح پنجاب اوورسیز کمیشن کا ادارہ زیادہ فعال نہیں رہا تھا لہذا نئی حکومت نے بہتر سمجھا کہ جب تک اوورسیز پاکستانیوں کے معاملات پر کوئی باقاعدہ بڑی پیش رفت کا فیصلہ نہیں کیا جاتا تب تک پنجاب اوورسیز کمیشن کو بھی غیر فعال کردیا جائے ،یہاں یہ بات یاد رہے کہ پنجاب اوورسیز کمیشن کے آئین اور قوانین کا مسودہ بیرسٹر امجد ملک نے بڑی ہی محنت سے ترتیب دیا تھا اور پنجاب اسمبلی نے باقاعدہ منظوری کے بعد اس کمیشن کو قائم کیا تھا جبکہ اوورسیز پاکستانی فاؤندیشن کا فی عرصہ سے اپنا کام جاری رکھے ہوئے تھی مگر بیورو کریسی کی ریشہ دوانیوں کےتحت میاں نواز شریف کے جیل جاتے ہی مرکزی سیکریٹری وزارتِ اوورسیزنے وزیرِاعظم شاہدخاقان عباسی سے مل کر اوورسیز پاکستانی فاؤندیشن کے بورڈ آف گورنر کے چئیرمین بیرسٹر امجد ملک کو سبکدوش کرواکے فاؤنڈیشن کا بورڈ آف گورنر غیر فعال کردیا اور خود ادارے کےاختیارات سنبھال لیئے اس طرح اوورسیز پاکستانیوں کے مذکورہ دونوں بہت ہی اہم ادارے غیرفعال ہو چکے ہیں ایسا زیادہ دیر تک نہیں رہ سکتا لہذا نئی حکومت اپنی دیگر مصروفیات سے فارغ ہوتے ہی اوورسیز کے معاملات کی طرف دھیان دے گی تو مذکورہ دونوں غیر فعال

اداروں کو بھی بحال کر دیا جائے گا ،اس سلسلے میں ایک اور گذارش ہے کہ زیادہ ممکن ہے کہ نئی حکومت اوورسیز پاکستانیوں کی ایک الگ وزارت قائم کر دے کیونکہ وزیرِاعظم عمران خان اوورسیز پاکستانیوں کے معاملات کے بارے میں کچھ زیادہ کرنا چاہتے ہیں لہذا ضروری ہے کہ اوورسیز پاکستانیوں کے معاملات کو بہتر طریقے سے چلانے کے لئے ایک بالکل الگ مرکزی وزارت قائم کر دی جائے۔

………………………..

222total visits,1visits today

Leave a comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *